Blog

محترم ڈاکٹر معراج الہدیٰ صدیقی صاحب(نائب امیر جماعت اسلامی پاکستان) کی وال سے:کل بعد نماز عصر گلشن تعلیم اسلام آباد میں مرکز تعلیم وتحقیق اسلام آباد کا وزٹ کیا۔ دورے کی دعوت مولانا جاوید اختر نے دی تھی۔ مولانا ڈاکٹر حبیب الرحمان صاحب نے اس مرکز کے بارے میں بریفنگ دی۔ مرکز تعلیم و تحقیق جمعیت طلبہ عربیہ کی مرکزی شوری کے فیصلے کے نتیجے میں قائم کیا گیا۔ 2009 میں اسکا افتتاح ڈاکٹر انیس احمد صاحب نے کیا۔ ڈاکٹر حبیب الرحمان صاحب جیسا قابل اور لائق آدمی اس پورے منصوبے میں مدیر اور مہتمم کا کردار ادا کررہا ہے۔ دو سالہ کورس میں طلبہ کو عربی اور انگلش سکھانے کیساتھ ریسرچ کی تربیت دی جاتی ہے۔ تحقیقی مقالہ جات Phd ماہرین کے زیرنگرانی تیار کروائے جاتے ہیں۔ اسوقت 38 طالب علم یہاں موجود ہیں۔ 70 فیصد دیر پائیں سے تعلق رکھتے ہیں۔ بقیہ زیادہ تر KP سندھ سے 2 پنجاب سے 1 بلوچستان اور کشمیر سے کوئی طالب علم نظر نہیں آیا۔ اسوقت ملک میں جماعت اسلامی سے وابستہ 8 اداروں میں تخصص فی الافتاء جاری ہے۔ لیکن جس Standard کا تخصص یہاں جاری ہے وہ یونیورسٹیز کے MPhil کے برابر ہے۔ یہاں کے فارغ التحصیل طلبہ میں سے ایک Phd کرچکے ہیں اور پانچ کررہے ہیں۔ میرے خیال میں اس ادارے کے مسائل کو حل کرنیکے ساتھ Kpk کے علاوہ دیگر صوبوں کو بھی یہاں طلبہ بھیجنا چاہئییں ڈاکٹر حبیب الرحمان جامعت الرشید اور بنوریہ ٹاؤن میں بھی کئی کئی دن کے پروگرام کرکے تخصص کے طلبہ کو ملکی قانون کے بارے میں بریفنگ اور تربیت دیتے ہیں۔ انہوں نے اپنی دو جلدوں کی کتاب کا تحفہ بھی دیا۔ میں نے جاوید اختر بھائی سے تحقیقی مقالہ جات کی کاپیز کا مطالبہ بھی کیا۔ ادارے کا مجلہ HEC کی Y CATEGORY میں اپرووڈ ہے۔ اس مفید ادارے کے مسائل حل کرتے ہوئے اس سے بھرپور طور پر فائدہ اٹھایا جانا چاہئے۔ ادارے کی کارکردگی دیکھ کر انتہائی خوشی ہوئیڈاکٹر حبیب الرحمان ڈاکٹر کاشف شیخ جاوید اختر بھائی اور تمام ساتھیوں کو اللہ رب العالمین رحمت و برکت سے نوازے اور اس ادارے کو ترقی و کامیابی دے۔ آمین ثم آمین

Leave a Comment

Your email address will not be published.